اسپین میں انسانی ٹاور بنانے کا سب سے بڑا مقابلہ کس نے جیتا؟ Spain's largest human tower

اسپین میں انسانی ٹاور بنانے کا سب سے بڑا مقابلہ کس نے جیتا؟ Spain’s largest human tower

Read Time:1 Minute, 56 Second


تاراگونا: اسپین میں انسانی ٹاور بنانے کا سب سے بڑا اور منفرد مقابلہ منعقد ہوا، جسے دیکھنے کے لیے ہزاروں تماشائیوں نے بُل فائٹنگ کا میدان بھر دیا تھا۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق اسپین میں اتوار کو انسانی مینار بنانے کا سب سے بڑا منفرد روایتی مقابلہ ہوا، 40 ٹیموں میں سبز جرسی پہنی ٹیم نے سب سے اونچا ٹاور بنا کر پہلی پوزیشن حاصل کی۔

کرونا وبا کے بعد پہلی بار اس روایتی کھیل سے میدان سجایا گیا، مقابلے میں شامل ٹیموں میں بچوں نے بھی خوب مدد کی۔ تقریباً 11 ہزار تماشائیوں نے شمال مشرقی شہر تاراگونا میں واقع بُل رِنگ کو کاتالان کی ثقافتی روایت کو دیکھا۔

ہیومن ٹاورز نامی اس روایت کو 2010 میں یونیسکو نے ’انسانیت کے غیر محسوس ثقافتی ورثے‘ کی فہرست میں شامل کیا تھا، کاتالان اسپین کی ایک ثقافتی شناخت ہے۔

رپورٹس کے مطابق یہ روایت 18 ویں صدی کی ہے، جب لوگوں نے پہلی بار کاتالان کے قصبے والز میں انسانی ٹاور بنانا شروع کیے تھے۔

تاراگونا میں ہر دو سال بعد منعقد ہونے والے ایک ایونٹ میں ٹاورز بنانے والی ٹیمیں ایک دوسرے کے کندھوں پر کھڑے ہو کر سب سے اونچے اور سب سے پیچیدہ ٹاور کی تشکیل کے لیے مقابلہ کرتی ہیں۔

ویلافرانکا کی ٹیم نے 40 دیگر گروپوں کو شکست دے کر ٹاپ پوزیشن حاصل کی، اور اس مقابلے میں 16 ہزار یورو کا انعام حاصل کیا۔ ان کا ٹاور 10 سطحات کی اونچائی تک پہنچا تھا، جو تقریباً 13 میٹر (43 فٹ) اونچا تھا، نہ صرف اونچائی بلکہ یہ مہارت کا بھی حسین امتزاج تھا، اس ٹاور کا اتار چڑھاؤ بھی متناسب اور محفوظ تھا، یہی وجہ تھی کہ اس نے سب سے زیادہ پوائنٹس بٹورے۔

Comments





Source link

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

Average Rating

5 Star
0%
4 Star
0%
3 Star
0%
2 Star
0%
1 Star
0%

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *